Thursday, February 27, 2014

paper cuttings











protest at press colony and arrested after protest








سرینگر27فروری //کے این این // جمعہ کے روز ہڑتال اور احتجاجی مظاہروںکے پیش نظرپولیس نے مزاحمتی لیڈران کے خلاف کریک ڈاون شروع کرتے ہوئے سالویشن مومنٹ کے چیرمین اور حریت (ع) کے لیڈر ظفر اکبر بٹ کو چھانہ پورہ سے گرفتار کر کے تھانے میں مقید رکھا گیا ہے جبکہ حریت (جے کے) کے شبیر احمد شاہ،تحریک حریت کے جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی کو خانہ نظر بند رکھا گیا۔اس دوران مزاحمتی لیڈان نے پولیس کارروائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے حربوں سے وہ رواں جدوجہد سے دستبردار نہیں ہونگے۔اس دوران سید علی گیلانی نے کپوارہ میں فوج کے ہاتھوں 7نوجوانوں کی مشکوک حالات میں ہلاکت، ان کی لاشوں کا مطالبہ کرنے والے تمام عام شہریوں پر طاقت کے بے تحاشا استعمال اور اس واقعے کی کسی غیر جانبدار ادارے کی طرف سے تحقیقات کرائے جانے پر زور دینے کے لےے 28مارچ جمعہ کو مکمل ہڑتال اور نماز کے بعد پُرامن مظاہرے کرنے کی اپیل دہرائی ہے۔کشمیر نیوز نیٹ ورک کے مطابق جمعہ کے روز حریت(گ ) کی جانب سے دی گئی احتجاجی ہڑتال کال اور مظاہروں کے پیش نظر پولیس نے مزاحمتی لیڈران کے خلاف کریک ڈاﺅن شروع کرتے ہوئے سالویشن مومنٹ کے چیرمین اور حریت (ع) کے لیڈر ظفر اکبر بٹ کو چھانہ پورہ سے گرفتار کر کے تھانے میں مقید رکھا گیا ہے جبکہ حریت (جے کے) کے شبیر احمد شاہ،تحریک حریت کے جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی کو خانہ نظر بند رکھا گیا۔اس سلسلے میں سالویشن مومنٹ ترجمان نے پولیس کی طرف سے اس کارروائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مزاحمتی لیڈران کے خلاف بلا جواز کریک ڈاون شروع کیا گیا ہے ۔ سالویشن مومنٹ کے ترجمان نے کے این این کو بتایا کہ تنظیم کے چیرمین ظفر اکبر بٹ کو اُس وقت پولیس نے جمعرات بعد دوپہر گرفتار کیا جب وہ واپس گھر لوٹ رہے تھے ۔ انہوںنے کہا کہ موصوف تنظیم کام کاج کے حوالے سے حریت دفتر پر گئے ہوئے تھے اور جب وہ واپس اپنی گھر کی طرف لوٹ رہے تھے تو چھانہ پورہ کے مقام پر انہیں پولیس کی ایک پارٹی نے گرفتار کر کے چھانہ پورہ پولیس اسٹیشن میں مقید رکھا۔ ترجمان نے پولیس کی کارروائی کو بلاجواز قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ۔

Saturday, February 22, 2014

Zafar condemns imposition of continued curfew in Pulwama

Zafar condemns imposition of continued curfew in Pulwama

visited hospital to enquire about injured persons






DEMAND LIFT OF CURFEW AND RESTRICTIONS FROM PULWAMA,CONDEMEN USE OF FORCE, VISITED HOSPITAL TO ENQUIRE ABOUT HEALTH OF INJURED, ZAFFAR AKBER BHAT.

Srinagar, February 22.. SR. APHC leader and the Chairman of Jammu and Kashmir Salvation Movement (JKSM), Zafar Akbar Butt has condemned the imposition of continued curfew in Pulwama and use of brute force by Indian troops on peaceful protest demonstrators.Zafar Akbar Butt along with a party delegation visited hospitals in Barzala and Soura and enquired about the health of those injured including Bhat Mayasar Ahmed by Indian troops in Pulwama
He said that the injured Mayasar Ahmad Butt was twice operated but he has not recovered as his right arm was damaged during shelling and firing. He said that Indian troops were using fatal weapons against peaceful demonstrators, which was condemnable. He also demanded lift of curfew from pulwama  and restrictions impound upon people for last 4 dyas.
He denounced the continued human rights violations by Indian troops  in the  territory. He said that 23 years had passed but the men in uniform involved in the mass rape of over 50 women in Kunan Poshmpora not yet punished. He deplored that India was using rape as a weapon against the people of Kashmir.
Zafar Akbar Butt said that India and its puppet administration were using different cheap tactics to suppress and weaken the ongoing liberation movement but they would never succeed in their nefarious designs. He said that the people of Kashmir had pledged to take the liberation movement to its logical conclusion.
He also paid glowing tributes to PILOT Nadeem Khateeb, Dr Turabi, Javed Ahmad, Muhammad Ameen of Bomai sopore and Ubair Ahmad of watergam on their martyrdom anniversaries and said that their sacrifices would not go waste.