Monday, August 31, 2009

سئلہ کشمیر کو عوامی خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے فوری اقدامات کئے جا ئےن - ظفر اکبر بٹ

سئلہ کشمیر کو عوامی خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے فوری اقدامات کئے جا ئےن - ظفر اکبر بٹ
سرینگر31اگست --جموںو کشمیرسالویشن مومنٹ پا ر ٹی کی طرف سے جاری عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما و چیرمین جموںو کشمیرسالویشن مومنٹ ظفر اکبر بٹ نے سول لائنز اور چاڈورہ کے مختلف علاقوں کا دورہ کر کے کارنر میٹنگوں میں عوام کے ساتھ بات کرتے ہوئے تحریک آزادی کے حوالے سے حریت پسندوں کے رول سے آگا ھ کیا اور اس بات پر زور دیا کہ عوام اور حریت پسندقیادت کے درمیان تال میل کو مزید بڑھانے کی اشد ضرورت ہے
۔انہوں نے کہا کہ حریت پسند ذی شعور شخصیات اور عوام کا فرض بنتا ہے کہ وہ اپنی حریت پسند قیادت کو بعض خامیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے شہیدوں ،محروسین اور جدو جہد کرنے والوں کی تحریکی امانت کی ہر محاذ پر نہ صرف حفاظت کریں بلکہ اسکو پائیہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے ملی اور قومی اتحاد کا مظاہرہ کریں اور حریت پسند قیادت پر بھی واضع کریں کہ وہ اجتماعیت چاہتے ہیں انفرادیت نہیں۔ کیونکہ یہ تحریک آزادی شہیدوں کے خون سے عبارت ہے ۔جناب بٹ صاحب نے جواں سال فردوس احمد بٹ ولد عبدالغنی بٹ ساکنہ نوگام کی المناک موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے اُن کے والدین اور دیگر رشتہ داروں سے اظہار تعزیت اور ہمدردی کرنے کیلئے اُن کے گھر گئے اور تعزیتی مجلس سے خطاب بھی کیا۔اسکے علاوہ دورے کے دوران حال ہی میں کئی فوت ہوئے افراد کے لواحقین کے ساتھ اظہار تعزیت اور ہمدردی کرنے کے علاوہ گھروں میں جاکر اُن کی ڈھارس بندھائی اور مرحومین کے حق میں دُعاءمغفرت بھی کی۔ یہ نہایت ہی مضحکہ خیز بات ہے کہ بغیر کسی قانونی اور اخلاقی جواز کے تقریبات تمام اعلیٰ حریت قیادت کو نظر بند کر دیا گیا ہے اور ان کے ساتھ غیر انسانی سلوک روا رکھا جارہا ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ مقبوضہ علاقے میں لوگوں کے سماجی اور سیاسی حقوق کا بالکل احترام نہیں کیا جارہا ہے ۔انھوںنے کہاکہ سید علی گیلانی ، شبیر احمد شاہ ،آسیہ اندرابی ، نعیم احمد خان ، محمد اشرف صحرائی ، مسرت عالم بٹ،محمد سلیم ننھا جی اور دیگر بیسیوں آزادی پسند رہنماﺅں اور کارکنوں کو مختلف جیلوں میں جسمانی اور ذہنی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے ادھر کمسن طالبہ فہمیدہ کو دوبارہ PSA کے تحت حکام کی طرف سے گرفتار کرنے کی مذمت کرتے ہوئے جناب ظفر اکبر بٹ نے کہا کہ کتنی بار اور کتنی دیر تک حریت پسندوں اور عام کشمیریوں کو PSA کے تحت گرفتار کرکے مبنی بر حق تحریک کو دبانے کی کوشش کی جائے دب نہیں سکے گی اور نہ ہی پچھلے 60 سال سے بھارت طاقت کے بل پر اسکو ختم کر سکھا لہذا حکومت ہند کو چاہئے کہ وقت ضایع کرنے کے بغیر مسئلہ کشمیر کو عوامی خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے فوری اقدامات اُٹھائیں تاکہ بر صغیر میں قیام امن کا خواب شرمندہ تعبیر ہو۔
شعبہ نشر و اشاعت

Friday, August 28, 2009

Zaffar Akber Bhat Adressed gathring at Jamia masjid Shankerpora.

مسئلہ کشمیرحل تک بر صغیر میں امن قائم کرنے کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا-ظفر اکبر بٹ-- کشمیری عوام کے خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے فوری اقدامات اُٹھائے جائیں
سرینگر28اگست - مسئلہ کشمیر کے قابل قبول حل تک بر صغیر کے علاوہ پوری دنیا میں امن قائم کرنے کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا ہے کیونکہ مسئلہ کشمیر ایک متنازعہ مسئلہ ہے اوراقو ام متحدہ سکیورٹی کونسل میں اس حوالے سے خود بھارت کے طرف سے پیش کی گئی قراردادیں اس بات کا واضع ثبوت ہے اور ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم آنجہانی پنڈت جواہر لال نہرو کی طرف سے لالچوک سرینگر میں60سال قبل کشمیریوں کے ساتھ ریفرنڈم کرانے کا وعدہ بھی اس کی ایک کڑی ہے۔ان خیالات کا اظہار کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما و چیرمین سالویشن مومنٹ ظفر اکبر بٹ نے آج نماز جمعہ کے موقعہ پر جامع مسجد شنکر پورہ میں کیا ۔انہوں نے کہاکہ بھارت پاک ترقی کے اس تیز رفتار دور میں جنگ کے متحمل نہیں ہوسکتے ہیں لہذا کشمیر سمیت دوسرے مسائل کو حل کرنے کیلئے بات چیت ہی واحد راستہ ہے

۔ انہوں نے کہا کہ شرم الشیخ میں ہندو پاک کے سربراہاں کے درمیان ملاقات اور مذاکرات کا آغاز اگر چہ ایک خوش آئندہ اقدام ہے لیکن اس کو آگے بڑھانے کی ضرورت ہے۔جناب بٹ صاحب نے کہا کہ حکومت ہند اور ریاستی سرکار کی طرف سے حقیقت سے کوسوں دور بیان کسی ایک ملک کیلئے سود مند ثابت نہیں ہو سکتے ہیں ۔لہذا مذاکراتی راستے کو سنجیدگی سے آگے بڑھایا جائے اور مسئلہ کشمیرکوکشمیری عوام کے خواہشات کے مطابق حل کرنے کیلئے فوری اقدامات اُٹھائے جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کی یقین دہانی پر مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کیلئے پُر امن راستہ اختیار کر نے والے اور بھارت کے زندانوں میں سالہا سال سے سختیاں جیلنے کے بعد رہا کئے گئے نوجوانوں کوبھارتی فورسز اور مختلف ایجنسیاں کسی نہ کسی بہانے آئے روز فوجی کیمپوں ، پولیس سٹیشنوں پر حاضری دینے کے علاوہ فرضی الزامات کے تحت گرفتار کر کے تشدد سے گذارتے رہتے ہیں اور کئی ایک کو بار بار بدنامہ زمانہ PSA کے تحت گرفتار کر کے ریاست سے باہر تہاڑ ،رانچی ،جودھپور جیلوں میں پابند سلاسل کیا جاتا ہے ۔ انہوں کہا کہ فورسز نے اِن نوجوانوں کے گذر بسر ،کام کاج کرنے اور اپنے عیال کو پالنے کیلئے کشمیر کی زمین اتنی تنگ کر دی کہ آنے والی نسل کو بھی پُر امن راستے کے بجائے دوسرا راستہ اختیار کرنے کیلئے مجبور کیا جارہا ہے ۔ بھارت کے اندر بھی تجارت پیشہ ،طالب علم اور ملازمت کرنے والے کشمیری محفوظ نہیں ہیں اور اگر وہ ہندوستان سے باہر عمرہ ،حج یا روزگار کیلئے جانا چاہئیں گے تو اُن کو گھر والوں اور دیگر رشتہ داروں سمیت سفری دستاویز فراہم نہیںکئے جاتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مذاکرات کی کامیابی اور بر صغیر میں امن کی ضمانت اسی صورت میں ممکن ہے کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے سے پہلے ہزاروں کنال زرخیز اراضی ،میوہ باغات اور رہائشی مکانات پر بھارتی افواج کے غیر قانونی قبضے کوہٹایا جائے ، انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکا جائے ،PSA ،Disturbed Area Act ,AFSPA کو منسوخ کیا جائے اور بزرگ علیل حریت رہنما سید علی شاہ گیلانی،شبیر احمد شاہ ، محمد اشرف صحرائی ، نعیم احمد خان، محمد سلیم ننھاجی ، آسیہ اندرابی، سمیت دیگر کشمیری نظر بندوں کی غیر مشروط رہائی عمل میں لا نے کے اقدامات اُٹھائے جائیںمسئلہ کے حل کے بغیر جنوبی ایشیاءمیں پائیدار امن و سلامتی کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا

Wednesday, August 26, 2009

Zaffar Akbar Bhat Demanding release of the pro-freedom Leaders.

Zaffar Akbar Bhat Demanding release of the pro-freedom Leaders.
Demanding release of the pro-freedom leaders, senior Hurriyat Conference (M) Zafar Akbar Bhat,Javid Mir, and, advocate Shahid-ul-Islam on Wednesday warned that if the government continued with its ‘autocratic polices’ ‘the next generation of Kashmir would be forced to pick guns again. Mir, Shahid and Bhat were among the first youth in Kashmir who picked up guns in late 80’s for the grant of right to self-determination to Kashmiris. Talking to Greater Kashmir, on Wednesday, they said the situation was similar to early 80’s. “The black history has been repeated. People are not even allowed to register their protest peacefully and they are treated like criminals. If the government continues with its autocratic policies, the next generation of Kashmir will be forced to pick up guns again,” they said. The present government, they said, had sought votes from people in the name of releasing all the pro-freedom leaders including ailing Syed Ali Shah Geelani, Muhammad Ashraf Sehrai, Shabir Shah, Masarat Alam Nayeem Khan, Aasiya Andrabi, Muhammad Salim Nanaji and others. “However, after assuming power, the present government has put senior pro-freedom leadership behind bars. They had only raised their voice against the rape and murder of Aasiya and Neelofar, and it is no crime. If it is a crime, then the government should arrest all the people who took to the streets in lakhs to protest against the heinous crime,” they said. They said hundreds of youth, including teenagers who were arrested during the Amarnath land row last year and Shopian incident were languishing in various jails of Jammu. They said an activist of Dukhtaran-e-Millat, Fahmeeda Sofi, a PUC student, has been kept with criminals in Amphala sub-jail in Jammu. “She is treated like a criminal. This is not democracy but sheer political vengeance,” they added. They strongly condemned the recent statement of a senior police officer that no pro-freedom leaders would be released. “The officer has extended his brief. It seems he is hell bent upon to impose martial law in the state whereas this is already a police state.” Asking New Delhi to resolve the Kashmir dispute according to the wishes and aspirations of Kashmiris, they reminded its leadership of the promise of plebiscite made by first Indian prime minister, Pandit Jawahar Lal Nehru. “The Indian leadership should understand that despite using cheap tactics to suppress the sentiments of Kashmirs by killing and harassing them since 1947, they have failed to deter their resolve to achieve freedom,” they added. They said for earlier resolution of Kashmir, we had launched a peaceful political struggle in late ‘90’s. “But we were harassed and put behind bars several times. New Delhi cannot hamper the movement by pressurizing the leadership.” they said adding, “The countless graveyards across the Valley stand testimony to the objective of Kashmiris,” they added.

Zaffar Akber Bhat met foreign media at his residence


Thursday, August 20, 2009

Zaffar Akbar Bhat expresses gratitude to Pakistan

Zaffar Akbar Bhat expresses gratitude to PakistanConcerns over the new discovered gravesSrinagar, August 20: The APHC leader and Chairman of Jammu and Kashmir Salvation Movement, Zaffar Akbar Bhat thanked Pakistan and its people for supporting Kashmir cause and expressing their concern for Kashmiris. Zaffar AKbar Bhat in a statement while thanking Pakistan government for extending moral, political and diplomatic support to Kashmiris said Pakistan is making great efforts to attract attention of people across the world towards rights violations by Indian forces in Kashmir. He said Kashmiri freedom struggle is an indigenous struggle and the Kashmiris continue their struggle amidst great hurdles. He said that Kashmiris have suffered Indian atrocities for the last 62 years adding that Pakistan would continue its support for Kashimiris. Prime Minister Syed Yusuf Raza Gilani on Thursday has said that Kashmir issue constituted the corner stone of foreign policy of Pakistan that could not be ignored. “Kashmir is the issue of whole country, and our total moral support is with the Kashmiri brothers,” the Prime Minister said while responding to a Point of Order of JUI-F leader Maulana Fazl ur Rahman in the National Assembly on Thursday.
Bhat also expressed grave concern over the discovered several unmarked graves containing about 1,500 unidentified bodies in Kashmir which was disclosed by the report of prominent rights group in Srinagar. Researchers from the Association of Parents of Disappeared People, or APDP, says at least eight of the graves held more than one body. "We have found more graves of about 1,500 people buried as unidentified in three remote districts during our ongoing survey," Pervez Imroz, the group's lawyer, told The Associated Press in an interview Thursday. "We've found that at least eight are mass graves as they contain more than one body." The latest report from the districts of Baramulla, Kupwara and Bandipore is part of the APDP's ongoing survey of the northern parts of Kashmir valley.

Wednesday, August 19, 2009

Authorities trying to cover up the Shopian tragedy

Authorities trying to cover up the Shopian tragedy
APHC leader and Chairman of Jammu and Kashmir Salvation Movement, Zaffar Akbar Bhat has said that the authorities were trying to shield the culprits of Shopian incident and that is why they are handing over it to India’s Central Bureau of Investigation (CBI).
He viewed that the authorities were trying to mislead and hoodwinking the people and hushing up the factual position about the Shopian case.
Bhat while urging India to hold referendum in Kashmir described the Indian Prime Minister, Dr Manmohan Singh’s remarks that the recent so-called elections in Jammu and Kashmir showed that the liberation ideology had no place here as unrealistic and ridiculous.

Tuesday, August 18, 2009

Wednesday, August 12, 2009

Saturday, August 1, 2009